الصَّافَّات ۔ صف آرائی کرنے والے 37

0
29

الصَّافَّات ۔ صف آرائی کرنے والے 37

سورۃ : 37 کل آیتیں : 182

اس سورت کی ابتدا ئی آیت میں الصافات کا لفظ جگہ پانے کی وجہ سے اس سورت کا نام یہ رکھا گیا ہے۔

بہت ہی مہربان ، نہایت ہی رحم والے اللہ کے نام سے …

1۔ صف آرائی کر نے والوں کی قسم379! 

2۔ سختی سے دھتکارنے والوں کی قسم379! 

3۔ نصیحت سنانے والوں کی قسم379!

4۔ تمہارا معبود ایک ہی ہے۔

5۔ (وہ) آسمانوں507 اور زمین کا اور ان کے درمیان کی تمام چیزوں کا رب ہے۔ مشرقوں کا بھی رب ہے335۔

6۔ پہلی آسمان507 کوہم نے ستاروں کی زینت سے آراستہ کیا۔ 

7۔ ہر سر کش شیطان سے محفوظ(بنا دیا)307۔ 

10,9,8۔ (فرشتوں جیسے) اعلیٰ گروہ سے (ایک دو لفظ)کان لگا کر سننے کے سوا وہ کچھ نہیں سن سکتے۔ دھتکارے جا نے کے لئے ہر ایک حصہ سے ان پر پھینکے جا نے والا چمکتا ہوا شعلہ انہیں بھگا دے گا307۔ انہیں دائمی عذاب بھی ہے26۔ 

11۔ ان سے پوچھو کہ کیا یہ قوت والے مخلوق ہیں یا(دوسرے وہ)جن کو ہم نے پیدا کیا؟انہیں ہم نے چپکتی مٹی 503&506سے پیدا کیا368۔ 

12۔ حقیقت میں تم (اللہ کی قدرت پر غور کر تے ہوئے) تعجب کر تے ہواور وہ لوگ تو مذاق اڑا رہے ہیں۔ 

13۔ جب ان کو نصیحت کی جاتی ہے تو وہ عبرت حاصل نہیں کرتے

14۔ نشانی وہ دیکھ بھی لیں تو مذاق اڑاتے ہیں۔ 

15۔ وہ کہتے ہیں357 کہ یہ صریح جادو کے سوا اور کچھ نہیں285۔ 

17,16۔ (وہ پوچھتے ہیں کہ)جب ہم مر کر مٹی اور ہڈیاں ہو جائیں گے تو کیا ہم اور ہمارے اگلے باپ دادا بھی پھر سے زندہ کئے جائیں گے26؟

18۔ کہو کہ ہاں، تم ذلیل ہونے والے ہو۔

19۔ وہ تو بس ایک زور کی آواز ہوگی۔ فوراً وہ دیکھیں گے

20۔ جب وہ کہیں گے کہ ہائے ہماری خرابی! یہ تو فیصلے کا دن 1 ہے۔ 

21۔ (کہا جائے گا کہ) تم نے جو جھوٹ سمجھ رکھا تھا وہ فیصلے کا دن 1 یہی ہے۔ 

23,22۔ ظلم کر نے والوں کو، ان کا ساتھ دینے والوں کو اور اللہ کے سوا دوسروں کی پرستش کر نے والوں کو اکٹھا کرو۔ انہیں دوزخ کا راستہ دکھاؤ26۔ 

24۔ (فرشتوں سے کہا جائے گا کہ) وہ لوگ پوچھ گچھ کئے جائیں گے، انہیں ٹہرائے رکھو۔

25۔ (پوچھا جائے گا کہ) تمہیں کیا ہوگیا ہے؟ تم کیوں ایک دوسرے کی مدد نہیں کرتے؟ 

26۔ ویسا نہیں ہوگا۔ آج1 وہ مغلوب ہوئے لوگ ہیں۔ 

27۔ وہ ایک دوسرے سے متوجہ ہو کر استفسار کر لیں گے۔ 

28۔ (بعض) کہیں گے کہ تم ہی ہم پر حکم چلانے والے تھے۔ 

29۔ (دوسرے چند) کہیں گے کہ نہیں، تم ہی ایمان لانے والے نہیں تھے۔

30۔ تم پر ہمارا کوئی اختیار نہیں تھا۔ بلکہ تم خود گمراہ لوگ تھے۔ 

31۔ پس ہمارے رب کا حکم ہمارے خلاف ثابت ہوچکا۔ (اس کا انجام) ہم بھگت رہے ہیں۔ 

32۔ (اور یہ بھی کہیں گے کہ)ہم نے تمہیں گمراہ کیا تھا۔ ہم بھی گمراہ تھے۔ 

33۔ اس دن وہ عذاب میں حصہ دار ہوں گے۔ 

34۔ مجرموں سے ہم ایسے ہی برتاؤکریں گے۔ 

35۔ جب ان سے کہا جائے کہ اللہ کے سوا عبادت کے لائق کوئی نہیں تو وہ تکبر کر تے تھے۔

36۔ وہ کہتے ہیں کہ کیا ہم ایک دیوانہ 468شاعر کی خاطر ہمارے معبودوں کو چھوڑ دیں گے؟ 

37۔ ایسا نہیں ہے۔ وہ سچائی لے کر آئے ہیں۔ رسولوں کی تصدیق کر تے ہیں۔ 

38۔ تم درد ناک عذاب چکھنے والے ہو۔ 

39۔ تم جو کر رہے تھے اس کے سوا (کسی چیز کے لئے) اجرت نہیں دئے جاؤگے۔ 

40۔ منتخب شدہ اللہ کے بندوں کے سوا۔ 

43,42,41۔ خوشگوار جنت کے باغات میں ان کے لئے جانی پہچانی غذااورمیوے ہیں۔ وہ احترام کے ساتھ برتاؤ کئے جائیں گے26۔ 

44۔ پلنگوں میں ایک دوسرے کے آمنے سامنے ہوں گے۔ 

45۔ شراب کے چشمے سے (بھرے ہوئے) جام ان کے اطراف آئے گا۔ 

46۔ وہ سفید اور پینے والوں کے لئے لذت دینے والا ہوگا۔ 

47۔ اس میں کوئی خرابی نہیں ہوگی۔ اور وہ مدمست بھی نہیں ہوں گے۔ 

49,48۔ ان کے ساتھ نیچی نگاہ والی حسین آنکھوں والیاں8 چھپائے رکھے ہوئے انڈوں کی طرح ہوں گی26۔ 

50۔ ان میں ایک دوسرے سے دریافت کریں گے۔ 

53,52,51۔ ان میں سے ایک شخص کہے گاکہ میرا ایک دوست تھا۔ (وہ مجھ سے پوچھا) کیا تم بھی (آخرت کے) ماننے والوں میں سے ایک ہو؟ ہم مر کر جب مٹی اور ہڈیاں بن جائیں گے تو کیا ہم بدلہ دئے جائیں گے26؟ 

54۔ (اللہ) پوچھے گا کہ کیا تم (اس کو) جھانک کر دیکھتے ہو؟ 

55۔ وہ جب جھانک کر دیکھے گا تو اس کو جہنم کے درمیان پائے گا۔ 

56۔ وہ (جہنمی سے) کہے گا کہ اللہ کی قسم! تم مجھے گڑھے میں گرانے کی کوشش کی۔ 

57۔ اگر میرے رب کا احسان نہ ہوتا تو (دوزخ میں) لے جا نے والوں میں میں بھی ہوتا۔

59,58۔ (وہ یہ بھی پوچھے گا کہ) ہماری پہلی موت کے سوا کیا ہم پھر سے مر نے والے نہیں؟ اورکیا ہم سزا دئے جانے والے بھی نہیں26؟

60۔ یہی بہت بڑی کامیابی ہے۔ 

61۔ عمل کر نے والے اس جیسے ہی کے لئے عمل کریں۔ 

62۔کیا یہ بہتر ٹھکانا ہے یا زقوم کا درخت؟ 

63۔ ہم نے اس کو ظالموں کے لئے آزمائش بنایا۔ 

64۔ وہ جہنم کی تہہ سے نکلنے والا درخت ہے۔ 

65۔ اس کا خوشہ شیطانوں کے سروں جیسا ہو تا ہے۔ 

66۔ وہ اس میں سے کھائیں گے۔ اس میں سے پیٹ بھریں گے۔ 

67۔ پھر اس پر کھولتا ہوا پانی بھی ان کے لئے ہو گا۔ 

68 ۔ پھر ان کا لوٹنا جہنم ہی ہوگا۔ 

69۔ وہ اپنے باپ دادا کو گمراہی میں پایا۔ 

70۔ انہیں کے نقش قدم پر یہ بھی کھینچے جا تے ہیں۔ 

71۔ پہلے گزرے ہوے لوگوں میں اکثر لوگ ان سے پہلے گمراہ ہوچکے تھے۔ 

72۔ ان کے پاس آگاہ کرنے والوں کو بھیجا۔

74,73۔ غور کرو کہ منتخب شدہ اللہ کے بندوں کے سوا آگاہ کئے جانے والوں کا انجام کیسا رہا26؟

75۔ نوح نے ہم سے دعا کی۔ ہم قبول کرنے والوں میں بہت بہتر ہیں۔ 

76۔ ان کو اور ان کے گھر والوں کو ہم نے بڑی مصیبت سے نجات دی۔ 

77۔ ان کے نسل ہی کو ہم نے باقی رہنے والا بنایا۔ 

78۔ پیچھے آنے والوں میں ان کی شہرت کو ہم نے قائم رکھا۔ 

79۔ دنیا والوں میں نوح پر سلام159 ہوگا۔ 

80۔ نیکوکاروں کو ہم اسی طرح اجرت دیتے ہیں۔ 

81۔ وہ ہمارے ایمان دار بندوں میں سے تھے۔ 

82۔پھر دوسروں کو ہم نے ڈبودیا۔ 

83۔ انہیں کی نسلوں میں ہیں ابراھیم ۔

84۔ یاد دلاؤ جبکہ وہ اپنے رب کے پاس پاک دل کے ساتھ آئے۔ 

85۔یاد دلاؤ جبکہ اس نے اپنے والد اور اپنی قوم سے پوچھا کہ تم کسے عبادت کر رہے ہو؟ 

86۔ اللہ کے سوا کیا تم خیالی معبودوں کو چاہتے ہو؟ 

87۔ (اور پوچھا کہ) سارے جہاں کے رب کے بارے میں تمہارا کیا خیال ہے؟ 

88۔ پھر وہ ستاروں کو غور سے دیکھا۔ 

89۔ اور کہا کہ میں بیمارہوں336۔ 

90۔ انہیں چھوڑکر وہ چلے گئے۔ 

92,91۔ ان کے معبودوں کے پاس جا کر پوچھنے لگے کہ کیا تم کھاتے نہیں ہو؟ کیوں بات نہیں کرتے؟ تمہیں کیا ہوگیا ہے26؟ 

93۔ پھر ان کے پاس (قریب )جا کرپوری قوت سے مارا473۔ 

94۔ وہ لوگ ان کی طرف دوڑتے ہوئے آئے۔ 

96,95۔ اور کہا کہ کیا تم تمہاری ہی تراشی ہوئی چیز کی پرستش کر تے ہو؟ اللہ ہی نے تم کو اور تمہاری بنائی ہوئی چیزوں کو پیدا کیا ہے26۔ 

97۔ انہوں نے کہا کہ ان کے لئے ایک مکان بنا کر ان کو آگ میں ڈالو۔ 

98۔ ان کے خلاف سازش کر نا چاہا۔ انہیں ہم نے پست کر دیا۔ 

99۔ اس نے کہا کہ میں اپنے رب کی طرف جاتا ہوں۔ وہ مجھے راستہ دکھائے گا۔ 

100۔ (دعا کی کہ) اے میرے پروردگار! مجھے اچھے اخلاق والوں میں سے ایک کو (بطور وارث) عطا کر۔ 

101۔ انہیں ایک نہایت ہی بردبار لڑکے (اسماعیل) کی بشارت سنائی۔ 

102۔ ان کے ساتھ دوڑدھوپ کر نے کی عمر کو جب وہ (اسماعیل) پہنچ گئے تو ابراھیم نے پوچھا کہ اے میرے پیارے بیٹے! میں تمہیں ذبح کر تے ہوئے455 خواب میں122 دیکھا۔ تم سوچ کر بتاؤ کہ تمہاری کیا رائے ہے؟ (اسماعیل نے) کہا کہ اے میرے ابا جان! تم کو جو حکم ہوا ہے کر گزرو۔ اگر اللہ چاہاتو تم مجھے صبر کر نے والا پاؤگے۔ 

105,104,103۔ دونوں نے مطیع ہو کر (اپنے) بیٹے کو جب اس نے پیشانی کے بل لٹا دیا تو ہم نے ا س کو پکار کر کہا کہ اے ابراھیم! تم نے اس خواب کو122 سچ کر دکھا دیا۔ نیک عمل کر نے والوں کو ہم اسی طرح اجرت دیتے ہیں26۔ 

106۔یہی بہت بڑی آزمائش ہے۔ 

107۔ ایک بڑا ذبیحہ اس کے عوض میں ہم نے دے دیا۔ 

108۔ پیچھے آنے والوں میں ان کی شہرت کو ہم نے قائم کر دیا۔ 

109۔ ابراھیم پر سلام159 ہوگا۔ 

110۔ نیک عمل کر نے والوں کو ہم اسی طرح اجرت دیتے ہیں۔ 

111۔ وہ ہمارے ایماندار بندوں میں سے ایک تھے۔ 

112۔ نبی اور نیک اسحاق کے بارے میں ہم نے انہیں خوشخبری دی۔ 

113۔ ان پر اور اسحاق پر ہم نے برکتیں نازل کیں۔ ان دونوں کی نسلوں میں نیکوکار بھی ہیں۔ اور اپنے آپ پر صریح ظلم کر نے والے بھی ہیں۔ 

114۔ موسیٰ اور ہارون پر بھی ہم نے احسان کیا۔ 

115۔ ان دونوں کو اور ان کی قوم کو بھی ہم نے بڑی مصیبت سے بچایا۔ 

116۔ ان کی مدد فرمائی۔ اس لئے وہی لوگ کامیاب رہے

117۔ ان دونوں کو واضح کتاب عطا کی۔ 

118۔ ان دونوں کو سیدھا راستہ دکھایا۔ 

119۔ پیچھے آنے والوں میں ان دونوں کی شہرت کو ہم نے قائم کر دیا۔

120۔ موسیٰ پر اور ہارون پر سلام159 ہوگا۔ 

121۔ نیک عمل کر نے والوں کو ہم اسی طرح اجرت دیتے ہیں۔

122۔ وہ دونوں ہمارے ایماندار بندوں میں سے تھے

123۔ الیاس بھی رسولوں میں سے ایک تھے۔ 

127,126,125,124۔ جب انہوں نے اپنی قوم سے کہا کہ کیا تم ڈرتے نہیں؟ سب سے بہتر خالق، تمہارا رب اور تمہارے باپ داداؤں کا رب، اللہ کو چھوڑ کرکیاتم بعل نامی بت کو پکارتے ہو؟ تو ان لوگوں نے ان کو جھوٹا سمجھا۔ وہ (ہمارے پاس )لائے جائیں گے26۔ 

128۔ منتخب شدہ اللہ کے بندوں کے سوا ۔

129۔ پیچھے آنے والوں میں ان کی شہرت کو ہم نے قائم کر دیا۔

130۔ الیاس پر سلام159 ہوگا۔ 

131۔ نیک عمل کر نے والوں کو ہم اسی طرح اجرت دیتے ہیں۔

132۔ وہ ہمارے ایماندار بندوں میں سے تھے۔

133۔ لوط بھی رسولوں میں سے ایک تھے۔ 

135,134۔ یاد دلاؤ جبکہ ہم نے ان کو اور (ہلاک ہونے والوں کے ساتھ)ٹہر جانے والی بڑھیا کے سوا ان کے گھر والے سب کو ہم نے بچالیا26۔ 

136۔ بعد میں دوسروں کو پوری طور سے ہلاک کردیا۔ 

138,137۔ صبح کے وقت اور رات میں تم ان پر سے گزرتے ہو۔ کیا تم سمجھوگے نہیں26؟ 

139۔ یونس رسولوں میں سے ایک تھے۔

141,140۔ بھری ہوئی کشتی کی طرف جب وہ چھپ کر بھاگے تو وہ لوگ قرعہ ڈالنے لگے (کشتی سے کس کو باہر نکالا جائے)۔ہارنے والوں میں سے وہ ہو گئے26۔ 

142۔ مذموم حالت میں ان کو مچھلی نے نگل لیا508۔ 

144,143۔ اگر وہ (ہماری) پاکی بیان نہ کر تے تو لوگ پھر سے زندہ کئے جانے والے دن1 تک وہ اسی کے پیٹ میں ٹہرے رہتے26۔ 

145۔ انہیں بیماروں کی طرح چٹیل میدان میں پھینک دیا

146۔ ان پر (سایہ دینے کے لئے) کدو کی بیل اگادی۔ 

147۔ ان کو ایک لاکھ یا (اس سے) زیادہ لوگوں پر رسول452 بنا کر بھیجا۔ 

148۔ وہ لوگ ایمان لے آئے۔ مقررہ مدت تک انہیں سہولتیں عطا کیں۔ 

149۔ ان سے پوچھو کہ کیا تمہارے پروردگار کے لئے بیٹیاں اور ان کے لئے بیٹے؟ 

150۔ ہم فرشتوں کو عورتیں بنایا تو کیا اس وقت یہ دیکھ رہے تھے؟ 

152,151۔ یاد رکھو! وہ لوگ جھوٹ گھڑ کر کہتے ہیں کہ اللہ نے (بچوں کو) جنم دیا ہے۔ وہ لوگ جھوٹ بولنے والے ہیں26۔ 

153۔ کیا وہ بیٹوں سے زیادہ بیٹیوں کو انتخاب کر لیا ہے؟

154۔ تمہیں کیا ہوگیا ہے؟ کیسے فیصلے کر تے ہو؟

155۔ کیا تم غور نہیں کروگے؟ 

156۔ یا تمہارے پاس کوئی واضح دلیل ہے؟ 

157۔ اگر تم سچے ہو تو اپنی کتاب لے کر آؤ۔ 

158۔جنات اور اس کے درمیان انہوں نے نسبی رشتہ تصور کر رکھا ہے۔ جنات تو جان رکھے ہیں کہ ہم (اللہ کے سامنے) حاضرکئے جائیں گے۔ 

159۔ وہ جو کہتے ہیں اس سے اللہ پاک ہے10۔ 

160۔ منتخب شدہ اللہ کے بندوں کے سوا۔ 

163,162,161۔ تم اور تمہارے معبود، جہنم میں جلنے والے کے سوا (دوسروں کو) گمراہ نہیں کر سکتے26۔ 

166,165,164۔(فرشتے کہیں گے کہ) ہم میں سے کوئی بھی ہو، ان کے لئے ایک خاص مقام ہے۔ ہم صف بستہ کھڑا رہنے والے ہیں اور تسبیح279 کر نے والے ہیں26۔ 

169,168,167۔ (شرک ٹہرانے والے) کہہ رہے تھے کہ ہمارے اگلوں کی طرف سے اگر ہمیں نصیحت ملی ہوتی تو ہم اللہ کے برگزیدہ بندے ہوتے26۔ 

170۔ اب وہ اسے انکار کر تے ہیں، بعد میں جان لیں گے

171۔ ہمارے بندے جو رسول ہیں، انہیں ہمارا حکم سبقت لے جا چکا۔ 

172۔ وہی مدد کئے جائیں گے۔ 

173۔ ہمارے لشکر ہی کامیاب ہوں گے۔ 

174۔ مقررہ مدت تک ان سے اعراض کرو۔ 

175۔ انہیں دیکھتے رہو، وہ بھی بعد میں دیکھ لیں گے۔ 

176۔ کیا وہ ہمارے عذاب کی جلدی کر رہے ہیں؟ 

177۔ جب ہمارا عذاب ان کے آنگن میں اتر جائے گا توخبردار کرائے جانے والوں کی صبح بڑی بری ہوجائے گی ۔

178۔ مقررہ وقت تک ان سے اعراض کرو۔ 

179۔دیکھتے رہو، وہ بھی بعد میں دیکھ لیں گے۔

180۔ ان لوگوں کے کہنے سے تمہارا رب، عزت کا مالک، پاک10 ہے

181۔ رسولوں پر سلام159 ہوگا۔ 

182۔ تمام تعریفیں اللہ ہی کے لئے ہیں جو سارے جہاں کا رب ہے۔ 

பகிர்

பதிலளி

உங்கள் கருத்துகளை பதிவிடுங்கள்
உங்கள் பெயர்